داتا دربار حملے کی تحقیقات میں بڑی کامیابی حاصل،خودکش حملہ آور اور سہولت کار کون نکلے؟نام سامنے آگئے


  لاہور(سی پی پی )داتا دربار خودکش حملے میں اہم پیش رفت سامنے آئی ہے۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے دھماکے کے سہولت کار محسن خان کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔محسن خان کا تعلق چارسدہ کے علاقے شبقدر سے ہے۔خود کش حملہ آور کی شناخت صدیق اللہ مہمند کے نام سے ہوئی۔خودکش حملہ آور صدیق اللہ اور محسن خان 8مئی کولاہور آئے تھے۔دونوں ملزمان نے داتا دربار کے قریب ایک مکان میں رہائش اختیار کی تھی۔
سہولت کارنے دوران تفتیش انکشاف کیا کہ وہ 6مئی کو طور خم کے راستے افغانستان سے پاکستان میں داخل ہوئے۔حملہ آور کا تعلق کالعدم تنظیم سے بتایا گیا ہے۔سی ٹی ڈی ذرائع کے مطابق خود کش حملہ آور کے سہولت کار سے بارودی مواد بھی برآمد ہوا ہے۔
یاد رہے کہ 8 مئی کو بدھ کی صبح تقریبا 8 بج کر 45 منٹ کے قریب داتا دربار کے گیٹ نمبر 2 پر ایلیٹ فورس کی گاڑی کے قریب ایک زور دار دھماکہ ہوا جس کے نتیجے میں پولیس اہلکاروں سمیت 11 افراد شہید جبکہ 30 افراد زخمی ہو گئے تھے۔
داتا دربار حملے کی تحقیقات میں بڑی کامیابی حاصل،خودکش حملہ آور اور سہولت کار کون نکلے؟نام سامنے آگئے داتا دربار حملے کی تحقیقات میں بڑی کامیابی حاصل،خودکش حملہ آور اور سہولت کار کون نکلے؟نام سامنے آگئے Reviewed by Walliam Marry on 5:27 AM Rating: 5

No comments:

Powered by Blogger.